خاتون کا خون نیلا کیسے ہوا؟

امریکا کے شہر پروویڈنس میں 25 سالہ خاتون کو کمزوری، تھکاوٹ اور سانس لینے میں دشواری کی وجہ سے اسپتال لایا گیا جہاں ان کی حالت دیکھ کر ڈاکٹرز حیران رہ گئے کیونکہ خاتون کا جسم مکمل طور پر نیلے رنگ کا ہو گیا تھا۔

ڈاکٹر اوٹس وارن اور بینجمن بلیک ووڈ نے جرنل آف میڈیسن میں خاتون کے نیلے ہو جانے کے کیس کو شائع کیا کیونکہ ایسا بہت کم ہی کسی مریض کو ہوتا ہے۔

جرنل آف میڈیسن میں ڈاکٹرز نے لکھا کہ خاتون کا رنگ مکمل طور پر نیلا ہونے کی وجہ سُن کرنے والی دوائی تھی جس نے جسم کی نسوں کو مردہ کر دیا تھا۔

خاتون نے بتایا کہ اس واقعے سے ایک رات قبل دانت کے درد کے باعث سُن کر دینے والی دوا ’ٹوپیکل بینزوکین‘ کا زیادہ استعمال کر لیا تھا۔

پروویڈینس شہر میں واقع میریام اسپتال کے فزیشین وارن نے بتایا کہ انہوں نے اس سے قبل کسی بھی ایسے مریض کو نہیں دیکھا جو اس قدر نیلے رنگ کا تھا۔

انہوں مزید بتایا کہ یہ کیس ان کیسز میں سے ایک تھا جن کے بارے میں ہم صرف پڑھا کرتے تھے مگر آج تک ایسا مریض دیکھا نہیں تھا۔

فزیشین وارن کا کہنا تھا کہ یہ حالت اس دوائی کا ری ایکشن تھا جو خون کو ٹشو تک آکسیجن لے جانے سے روکتا ہے، اور اس طرح کی حالت کو میڈیکل کی اصطلاح میں ’میتھیموگلوبینیمیا‘ کہتے ہیں۔

خون میں آکسیجن کی معتدل مقدار کی وجہ سے ہی خون کا رنگ لال ہوتا ہے، اگر خون مین آکسیجن کی تعداد ضرورت سے زیادہ ہو جائے تو خون کا رنگ تبدیل ہو کر نیلا ہوجاتا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.